مالیگاؤں: زمینی قلعہ کے اطراف ناجائز قبضہ کے خلاف لوک ایوکت (ممبئی) میں شکایت

زمینی قلعہ کے اطراف ناجائز قبضہ کے خلاف لوک ایوکت (ممبئی) میں شکایت کے بعد ضلع کلکٹر سورج مانڈھرے کا مالیگاؤں کے زمینی قلعہ کا دودہ

ریاست مہاراشٹر کا شہر مالیگاؤں یوں تو بنکروں اور مزدوروں کا شہر کہا جاتا ہے لیکن وہیں دوسری جانب یہ شہر گنگا جمنی تہذیب کی مثال اور تاریخی شناخت بھی رکھتا ہے.مالیگاؤں میں واقع زمینی قلعہ راجا ناروشکر کی سب سے اہم تعمیر میں سے ایک ہے، مہاراشٹر کے زمینی قلعوں میں اس کی خاص اہمیت ہے.انجینئرنگ کے نقطہ نظر سے دیکھا جائے تو اس کی تعمیر کے اصول دیکھ کر حیرت ہوتی ہے.مالیگاؤں کا زمینی قلعہ بھی ایک تاریخی عمارت اور آثار قدیمہ کی نشانی بھی ہے.اس خوبصورت زمینی قلعہ کے ساتھ کئی دہائیوں سے تعصب ہو رہا ہے.

محکمہ آثار قدیمہ کو توجہ دلانے کے باوجود قلعہ کی حالت بد سے بدتر ہوتی جارہی ہے، جس کی وجہ سے قلعہ کے اندر اور باہر ناجائز قبضہ ہو رہا ہے اور ایک جانب قلعہ دھیرے دھیرے زمین دوز ہورہا ہے.معلومات کے مطابق زمینی قلعہ کے اطراف ناجائز قبضوں کو لے کر کارپوریشن میں کئی مرتبہ شکایت کی گئی.مگر اس معاملے میں کاروائی نہ ہونے کے بعد ناگری سمیتی کے صدر “رام داس بورسے” نامی شخص نے لوک ایوکت (ممبئی) میں شکایت کی۔


اس سلسلے میں رام داس بورسے نے نمائندے کو بتایا کہ وہ لوک ایوکت (ممبئی) میں ایک درخواست دیے ہے.جس میں مالیگاؤں کے زمینی قلعہ کی خستہ حالی اور قلعہ کے اندر اور باہر ناجائز قبضوں کے بارے میں وضاحت کی گئی ہے.موصوف نے کہا کہ قلعہ کی بقاء اور اصل شناخت تب ہی ممکن ہے جب حکومت قلعہ کے اطراف اور دیواروں پر آباد لوگوں کو شہر کے کسی دوسرے علاقے میں جگہ دے کر انہیں اس جگہ منتقل کرے.اور قلعہ کے اندر اور باہر ناجائز قبضہ کو ہٹاکر خندقوں کی صفائی کرکے ایک بہترین سیر و تفریح و سیاحت اور آمدنی کا زریعہ بنایا جائے اور یہ تاریخی قلعہ جو ہندو مسلم یکجہتی کا مظاہرہ کرنے کے ساتھ ساتھ انگریزوں کے خلاف بہادری کی کہانیاں پیش کررہا ہے اسے دنیا کے سامنے نیشنل ہیری ٹیج کا درجہ دے کر پیش کیا جائے۔


واضح رہے کہ رام داس بورسے کی اس درخواست پر لوک ایوکت (ممبئی) نے لوک ڈاؤن سے پہلے دو مرتبہ سنوائی کی تھی اور موصوف کو ممبئی بھی بلایا گیا تھا.اسکے بعد اس معاملے میں گزشتہ دنوں 11 فروری 2021 کو آن لائن سنوائی ہوئی جس میں ضلع کلکٹر سورج مانڈھرے سے پوچھا گیا کی آپ اس سلسلے میں کیا اقدامات کرنے والے ہو.اس ضمن میں ضلع کلکٹر سورج مانڈھرے نے تمام مسائل کو سننے کے بعد تعاون کی یقین دہائی کرائی.اس تعلق سے ضلع کلکٹر سورج مانڈھرے نے نمائندے کو بتایا کہ مالیگاؤں شہر سے لوک ایوکت (ممبئی) میں مالیگاؤں کے زمینی قلعہ کے اطراف ناجائز قبضہ اور اسکی حفاظت کیلئے ایک شکایت دی گئی تھی.اس شکایت کے بعد سورج مانڈھرے گزشتہ کل زمینی قلعہ کا جائزہ لینے کیلئے تمام محکمہ کے ساتھ مالیگاؤں پہنچے تھے.اور اس تاریخی زمینی قلعہ کا باریک بینی سے جائزہ لیا.موصوف نے کہا کہ قلعہ کے اندر اور باہر بڑے پیمانے پر ناجائز قبضہ کافی مدت سے ہیں.

سورج مانڈھرے نے بتایا کہ وہ سب سے پہلے زمینی قلعہ کے اطراف کی جگہ کا ٹائٹل ویریفکیشن کیے کہ یہ زمین کسی کے نام پر ہیں.ٹائٹل ویریفکیشن سروے کے بعد معلوم ہوکہ یہ پہلے زمانے میں سروے نمبر 240 تھا، سٹی سروے ہونے کے بعد یہ 109 بن گیا.اور قلعہ کی زمین کا الگ سے پراپرٹی کارڈ بنا ہوا ہے.جس سے صرف طور پر ظاہر ہوتا کہ کی یہ زمین سرکار کی ہے.کسی پرائیویٹ ادارے کی نہیں ہے.موصوف نے واضح طور پر کہا کہ زمینی قلعہ کے اطراف اب نہ کوئی ناجائز قبضہ کرے گا اور نہ کسی زمین کی خرید و فروخت کرے گا.ایسا کرنے والے افراد کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے گی.اور جو قلعہ کے اطراف کافی مدت سے موجود ہے ان کو حکومت کی پالیسی کے مطابق دوسری جگہ منتقل کیا جائے گا یہ اسی جگہ پر رہنے کے لئے کہا جائے گا.اس معاملے میں لوک ایوکت (ممبئی) کے جو اقدامات آئے گئے اس تعلق سے آگے کی کاروائی کی جائے گی.اس سلسلے میں سبھی محکمہ کو پتہ ہے کی کسی طرح سے ایسے مسئلہ کو حل کرنا چاہیے.اور اس معاملے میں حکومت کی پالیسی کے مطابق فیصلہ کیا جائے گا۔


Related Articles

Back to top button
Don`t copy text!
Close