مالیگاؤں: پاورلوم مزدور نے پھانسی لگاکر خودکشی کرلی

ریاست مہاراشٹر کے صنعتی شہر مالیگاؤں میں تنگدستی کے سبب ایک پاورلوم مزدور نے گزشتہ شب پھانسی لگاکر خودکشی کرلی.

مالیگاؤں: مالیگاؤں شہر میں خودکشی کے معاملات میں دن بدن اضافہ ہوتا جارہا ہے.جاری ہفتہ میں خودکشی کا یہ چوتھا معاملہ سامنے آیا ہے.لوگ معمولی سی وجوہات کے بناء پر اپنی زندگی کو ختم کررہے ہے.گزشتہ شب سروے نمبر 38 نیااسلام پورہ (مالیگاؤں) میں خالد احمد شکیل احمد (36) سالہ شادی شدہ نوجوان نے اپنے مکان کی چھت سے پھانسی کا پھندا لگاکرخودکشی کرلی.


اس ضمن میں مالیگاؤں پاور لوم ایسوسی ایشن کے صدر یوسف الیاس نے نمائندے کو بتایا کہ جمعہ کے دن شہر کے تمام پارولوم بند ہوتے ہے.چھٹی ہونے کی وجہ سے خالد احمد بھی گھر کے اوپری حصے میں آرام کررہے تھے.بعدازاں رات کے کھانے پر بلانے گئے بھائی کو جب روم کا دروازہ بند ملا تو وہ کھڑکی کے ذریعے معلومات لینے کی کوشش کی تو سامنے خالد احمد کی لاش جھولے کی رسی سے لٹکتی ہوئے نظر آئی.

اس معاملے میں گھر کے ذمہ داران نے محلے کے سرکردہ افراد کی مدد سے اس بات کی اطلاع مقامی کارپوریٹر اور یوسف الیاس کے ساتھ ساتھ سماجی کارکن شیخ شفیق کو دی.اطلاع ملتے ہی سبھی افراد جائے حادثہ پر پہنچ کر قانونی کاروائی کیلئے فورا عائشہ نگر پولیس اسٹیشن سے رابطہ کیا گیا.عائشہ نگر پولیس جائے حادثہ پر پہنچ کر تفتیش شروع کردی.اور لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے جنرل ہاسپٹل میں روانہ کردیا.

سماجی کارکن شیخ شفیق نے کہا کہ یہ جاری ہفتہ کا چوتھا معاملے ہے تین شہری علاقے میں اور ایک مالیگاؤں آؤٹر کا موصوف نے اس بات پر روشنی ڈالیں کہ اسلام میں خودکشی حرام ہے.اور عوام سے اپیل کی کہ خودکشی مسئلہ کا حل نہیں ہے.اور تمام قانونی مراحل کی تکمیل کے بعد لاش کو اہل خانہ کے حوالے کردیا گیا.واضح رہے کہ خودکشی کرنے کی وجہ تنگدستی اور کئی دوسری وجہ بتائی جا رہی ہے.


Related Articles

Back to top button
Don`t copy text!
Close